عالمی وبا کورونا وائرس میں مبتلا میکسیکو سے تعلق رکھنے والا دنیا کا فربہ ترین شخص صحتیاب ہوگیا

میکسیکو سے تعلق رکھنے والے دنیا کے سب وزنی اور فربہ 36 سالہ ہوآن پیڈرو فرانکو ذیابیطس، ہائی بلڈ پریشر اور پھیپھڑوں کے دائمی مرض میں مبتلا ہیں 208 کلو وزنی ہوآن پیڈرو فرانکو  کے پاس موٹاپے کا عالمی ریکارڈ بھی ہے اس سب کے باوجود وہ کورونا وائرس کو شکست دینے میں کامیاب ہوگئے ہیں

عالمی وبا کورونا وائرس میں مبتلا میکسیکو سے تعلق رکھنے والا دنیا کا فربہ ترین شخص صحتیاب ہوگیا

عالمی وبا کورونا وائرس میں مبتلا میکسیکو سے تعلق رکھنے والا دنیا کا فربہ ترین شخص صحتیاب ہوگیا۔ میکسیکو سے تعلق رکھنے والے دنیا کے سب وزنی اور فربہ 36 سالہ ہوآن پیڈرو فرانکو ذیابیطس، ہائی بلڈ پریشر اور پھیپھڑوں کے دائمی مرض میں مبتلا ہیں۔ 208 کلو وزنی ہوآن پیڈرو فرانکو  کے پاس موٹاپے کا عالمی ریکارڈ بھی ہے اس سب کے باوجود وہ کورونا وائرس کو شکست دینے میں کامیاب ہوگئے ہیں۔  خبر رساں ادارے کے مطابق ہوآن پیڈرو فرانکو کورونا وائرس کے ہاتھوں اپنی67 سالہ والدہ کو بھی کھو چکے ہیں۔ دنیا کے فربہ ترین شخص نے کورونا کے شکست دینے کے حوالے سے کہا کہ یہ ایک خطرناک بیماری ہے، مجھے کورونا وائرس کے دوران سر اور جسم میں درد، سانس لینے میں دشواری اور بخارکا سامنا کرنا پڑا۔ فرانکو کی ڈاکٹر نے ان کی کورونا سے جنگ کے حوالے سے بتایا کہ ​ہوآن پیڈرو فرانکو نے کورونا وائرس کے خلاف ایک مشکل جنگ لڑی ہے۔ ہوآن پیڈرو فرانکو کا نام 33 سال کی عمر میں 2017 میں دنیا کے سب سے وزنی شخص کے طور پر گینز بک آف ورلڈ ریکارڈ میں درج کیا گیا تھا۔