صوبائی وزیر ماحولیات محمد رضوان اور انڈسٹریز میاں اسلم کی زیر صدارت سموگ کمیٹی کا اجلاس

دونوں صوبائی وزراء نے اسموگ کمیٹی کے شرکا کی پیشرفت کا تفصیلی جائزہ لیا  بھٹوں کو زگ زیگ ٹیکنالوجی میں منتقلی کے حوالے سے مزید موقع دینے کے تجویز غیر معیاری ایندھن استعمال کرنے والی اسٹیل ملوں کے خلاف سخت کارروائی کی جائے گی۔محمد رضوان

صوبائی وزیر ماحولیات محمد رضوان اور انڈسٹریز میاں اسلم کی زیر صدارت سموگ کمیٹی کا اجلاس

لاہور:صوبائی وزیر برائے تحفظ ماحولیات محمد رضوان اور انڈسٹریز میاں اسلم اقبال کی مشترکہ زیر صدارت سموگ کمیٹی کا اجلاس محکمہ ماحولیات کے کمیٹی روم میں منعقد ہوا۔صوبائی وزیر ماحولیات باؤ رضوان نے اجلاس کو بتایا کہ بھٹوں کو زگ زیگ ٹیکنالوجی میں منتقلی کے حوالے سے مزید موقع دینے کے لئے ایک نوٹ وزیراعلیٰ پنجاب کو بھیجا جائیگا بعد ازاں اینٹوں کے بھٹوں کے بارے میں حتمی فیصلہ کیا جائے گا۔ انہوں نے کہا کہ پنجاب کے کسی بھی علاقے میں کسی قسم کا ٹھوس کچرا جیسے ہسپتال کا فضلہ یا پلاسٹک کا فضلہ جلانے کی ہرگز اجازت نہیں ہوگی۔

غیر معیاری ایندھن استعمال کرنے والی اسٹیل ملوں کے خلاف بھی سخت کارروائی کی جائے گی۔صوبائی وزیر صنعت نے کہا کہ کسی بھی صنعتی یونٹ کو اس وقت تک کام کرنے کی اجازت نہیں ہوگی جب تک کہ وہ ایف بی آر کے ساتھ رجسٹرڈ نہیں ہوگا۔ مزید یہ کہ صنعتی اکائیوں کو بھی اپنے متعلقہ محکموں کی منظوری حاصل کرنا ہوگی بصورت دیگر کسی بھی قیمت پر ان کو کام کی اجازت نہیں مل سکے گی۔

دونوں وزراء نے اسموگ کمیٹی کے شرکا کی پیشرفت کا جائزہ لیا اور فیصلہ کیا کہ تمام کاموں کو تیز تر کردیا جائے گا اور سموگ سیزن کی آمد سے قبل تمام ضروری اقدامات کو حتمی شکل دی جائے۔ اینٹوں کے بھٹوں بارے تفصیلی تبادلہ خیال کیا گیا اور فیصلہ کیا گیا ہے کہ انہیں بینک آف پنجاب کے توسط سے سافٹ قرضوں کی سہولت فراہم کی جائیگی تاکہ زگ زیگ ٹیکنالوجی میں منتقل کرنے میں آسانی ہو۔ مزید برآں، تمام محکموں کے نمائندوں نے اجلاس کو آگاہ کیا کہ وہ اپنے فرائض سر انجام دے رہے ہیں اور اسموگ سیزن سے پہلے تمام امور کو حتمی شکل دے رہے ہیں۔

اجلا س میں مزید فیصلہ کیا گیا کہ ٹرانسپورٹ اور ٹریفک پولیس ٹو اسٹروک گاڑیوں کے خلاف ابھی سے کارروائیاں تیز کریں گی جبکہ محکمہ زراعت سیکشن 144 کا نفاذ کرے گی جبکہ کسی بھی کسان کو اپنی فصل کے باقی فصلوں وغیر ہ کو جلا نے کی ہرگز اجازت نہیں ہوگی۔ محکمہ صحت ہسپتالوں کے فضلہ وغیرہ کامکمل ڈیٹا مرتب کرکے اگلی میٹنگ میں پیش کرے گا۔سیکرٹری ای پی ڈی پنجاب زاہد حسین، ڈی جی ای پی اے  اشعر عباس زیدی، نمائندگان ٹریفک پولیس، زراعت، صحت، لوکل گورنمنٹ ٹرانسپورٹ، توانائی اور صنعت نے اجلاس میں شرکت کی۔