صوبائی وزیر آبپاشی محمد محسن خان لغاری اور صوبائی وزیر پنجاب ڈیزاسٹر مینجمنٹ اتھارٹی میاں خالد محمود کی زیر صدارت اہم اجلاس

اجلاس میں ممکنہ سیلاب کے پیش نظر حفاظتی اقدامات کے حوالے سے صوبائی وزراء کو بریفنگ دی گئی- اجلاس میں چیف سیکرٹری پنجاب، سیکرٹری پی اینڈ ڈی، سیکرٹری پرائمری ہیلتھ کیئر، ڈی جی ریسکیو 1122، ڈی جی پی ڈی ایم اے، ڈائریکٹر میٹ لاہوراور پی ڈی ایم کے دیگر افسران نے شرکت کی-

صوبائی وزیر آبپاشی محمد محسن خان لغاری اور صوبائی وزیر پنجاب ڈیزاسٹر مینجمنٹ اتھارٹی میاں خالد محمود کی زیر صدارت اہم اجلاس

 لاہور : صوبائی وزیر آبپاشی محمد محسن خان لغاری اور صوبائی وزیر پنجاب ڈیزاسٹر مینجمنٹ اتھارٹی میاں خالد محمود کی زیر صدارت ممکنہ سیلاب کے خطرہ کے پیش نظر حفاظتی اقدامات کا جائزہ لینے کے لئے پنجاب ڈیزاسٹر مینجمنٹ اتھارٹی کے ہیڈ کوارٹر میں اہم اجلاس منعقد ہوا- اجلاس میں ممکنہ سیلاب کے پیش نظر حفاظتی اقدامات کے حوالے سے صوبائی وزراء کو بریفنگ دی گئی- اجلاس میں چیف سیکرٹری پنجاب، سیکرٹری پی اینڈ ڈی، سیکرٹری پرائمری ہیلتھ کیئر، ڈی جی ریسکیو 1122، ڈی جی پی ڈی ایم اے، ڈائریکٹر میٹ لاہوراور پی ڈی ایم کے دیگر افسران نے شرکت کی- سیکرٹری آبپاشی، کمشنر راولپنڈی، سرگودھا، فیصل آباد، ڈی جی خان اور ڈپٹی کمشنر جہلم نے ویڈیو لنک کے ذریعے صوبائی وزراء کو محکموں کی طرف سے اٹھائے جانے والے اقدامات سے آگاہ کیا-

صوبائی وزراء کو بریفنگ میں بتایا گیا کہ فلڈ وارننگ جاری ہونے کے بعد اور سیلاب سے بچاؤ کے لئے تمام حفاظتی اقدامات کو حتمی شکل دی جاچکی ہے- پی ڈی ایم اے کے افسران نے صوبائی وزراء کو آگاہ کیا کہ ممکنہ سیلاب کے خطرے کے پیش نظر تمام حفاظتی سامان جس میں خوراک، لائف جیکٹس، کشتیاں، ٹینٹ وغیرہ شامل ہیں ہر ضلع میں سیلاب کے ممکنہ خطرے والے علاقوں میں پہنچا دی گئی ہیں - ڈائریکٹر میٹ نے اجلاس کو بتایا کہ آنے والے تین دنوں تک منگلا کے بارشی علاقوں میں بارش کا امکان ہے جس سے ڈیم کی سطح بلند ہوسکتی ہے-

انہوں نے کہا کہ اس سال اگست میں 92 فیصدزیادہ بارشیں ریکارڈ ہوئی ہیں جس کی وجہ سے سیلاب کا خطرہ بڑھ گیا ہے- منگلا ڈیم کی پانی ذخیرہ کرنے کی کل استعداد 1242فٹ ہے جبکہ اس وقت 1239فٹ پانی ڈیم میں موجود ہے- دریائے چناب میں مرالہ اور ہیڈ خانکی کے مقام پر درمیانے درجے کے سیلاب کی توقع ہے -