پنجاب احساس پروگرام کے تحت باہمت بزرگ پروگرام کا آغازبے حد خوش آئند ہے

 وزیراعظم عمران خان نے ریاست مدینہ کا جو تصور دیا ہے، اس کے آغاز کی طرف بڑھ چکے ہیں ریاست مدینہ کا قیام طویل اورصبر آزما ہےاس سنگ میل کو عبور کرنے میں ضرور کامیاب ہوں گے ریاست مدینہ ایسی مثالی ریاست ہوں گی جہاں ہر فرد،ہر شہری کیلئے ریاست اپنی ذمہ داریوں کو نبھائے گی ہمارے معاشرے کا اہم ترین طبقہ ہمارے بزرگ ہے جن کی قدر ومنزلت اورخدمت نہ صرف سماجی بلکہ مذہبی ذمہ داری بھی ہے

پنجاب احساس پروگرام کے تحت باہمت بزرگ پروگرام کا آغازبے حد خوش آئند ہے

لاہور : وزیر اعلیٰ پنجاب کے پولیٹیکل ایڈوائزر سید رفاقت علی گیلانی نے کہا ہے کہپنجاب احساس پروگرام کے تحت باہمت بزرگ پروگرام کا آغازبے حد خوش آئند ہے۔ وزیراعظم عمران خان نے ریاست مدینہ کا جو تصور دیا ہے۔ اس کے آغاز کی طرف بڑھ چکے ہیں۔ریاست مدینہ کا قیام طویل اورصبر آزما ہے۔ اس سنگ میل کو عبور کرنے میں ضرور کامیاب ہوں گے۔ریاست مدینہ ایسی مثالی ریاست ہوں گی جہاں ہر فرد،ہر شہری کیلئے ریاست اپنی ذمہ داریوں کو نبھائے گی۔ہمارے معاشرے کا اہم ترین طبقہ ہمارے بزرگ ہے جن کی قدر ومنزلت اورخدمت نہ صرف سماجی بلکہ مذہبی ذمہ داری بھی ہے۔وہ لوگ جنہوں نے اپنی زندگی معاشرے اورخاندان کی خدمت میں گزار دی۔ان کا حق ہے کہ انہیں عمرکے آخری ایام میں ہر سکھ ملے اورانہیں تمام تر ذمہ داریوں کے بوجھ سے آزاد کردیا جائے۔

حکومت پنجاب بزرگوں سمیت معاشرے کے دیگرنظر انداز کردہ طبقات کی خدمت اورضروریات کو پورا کرنے کیلئے پنجاب احساس پروگرام کا آغاز کرچکی ہے۔کچھ عرصہ قبل تیزاب سے متاثرہ افراد کیلئے ”نئی زندگی“کا آغاز کیا۔”باہمت بزرگ“ احساس پروگرام کا ہی حصہ ہے۔”باہمت بزرگ“ پنجاب سوشل پروٹیکشن اتھارٹی کے تحت بزرگ افراد کی فلاح وبہبود کیلئے اپنی نوعیت کامنفرد سوشل پنشن پروگرام ہے۔جس کی ماضی میں کوئی مثال نہیں۔”باہمت بزرگ“ کے تحت صوبہ بھر میں 65سال یا اس سے زائد عمر کے بزرگ شہریوں کو ماہانہ وظیفہ دیا جائے گا جس کے لئے ابتدائی طورپر دو ارب روپے مختص کیے گئے ہیں۔اس پروگرام سے بے سہارا بزرگ شہریوں کو معاشی آسانی ہوگی اورخاص طورپر بزرگ خواتین کو اس پروگرام میں شامل کیا گیاہے تاکہ انہیں اپنی ضروریات کے لئے کسی کا دست نگر نہ ہونا پڑے۔