صوبائی وزیر انسانی حقوق اعجاز عالم آگسٹین کا معصوم بچے کی تشدد کے باعث ہلاکت کا نوٹس

ایسے گھناﺅنے فعل کے مرتکب کسی بھی رعائیت کے مستحق نہیں ہو سکتے:اعجاز عالم آگسٹین

صوبائی وزیر انسانی حقوق اعجاز عالم آگسٹین کا معصوم بچے کی تشدد کے باعث ہلاکت کا نوٹس

لاہور  : صوبائی وزیر انسانی حقو ق اعجاز عالم آگسٹین نے پنڈی بھٹیاں میں معصوم بچے کی تشدد کے باعث ہلاکت کا نوٹس لیتے ہوئے آر پی او راولپنڈی کو بذریعہ ٹیلی فون ہدایت جا ری کردیں کہ ملزم کے خلاف فوی طور پر ایف آئی آر کے اندراج کے بعد قانونی کارروائی کی جائے کیونکہ ایسے لوگ استاد جیسے عظیم مرتبے کی ساکھ کو نقصان پہنچا رہے ہیں اور ایسے لوگوں کو جیل کی سلاخوں کے پیچھے ہونا چاہیئے جنہوں نے معصوم پھول کو کھلنے سے قبل ہی بے دردی سے مسل دیا۔

تفصیلات کے مطابق پنڈی بھٹیاں کا رہنے والا پانچ سالہ بچہ کئی روز سے بخار میں مبتلا ہونے کی وجہ سے جب کافی روز بعد مدرسہ پہنچا تو استاد نے وحشیانہ اور بے رحمی سے بچے پر تشدد کیا، جسکے نتیجے میں بچہ بے ہوش ہوگیا۔ جب بچے کی ماں جائے وقوعہ پر پہنچی تو اس نے دیکھا کہ اس کے بچے کی پیٹھ خون سے بھری ہوئی تھی اور اس کا انتقال ہو چکا تھا ۔

بیوہ خاتون نے اپیل میںحکام بالا کی توجہ اس طرف مبذول کرائی تھی کہ بااثر مدرسہ ٹیچر پولیس کے پاس جانے کی بجائے طاقت کے ذریعے تنازعہ حل کرنے پر مجبور کررہا ہے۔ صوبائی وزیر نے بچے کی والدہ کو یقین دلایا کہ ان کو ہر حال میں انصاف کی فراہمی یقینی بنائی جائےگی اور ملزم کتنا بھی با اثر کیوں نہ ہو قانون کی گرفت سے نہیں بچ سکتا۔