مذہبی سیاحت کو فروغ دینا، تاریخی مساجد و عمارات اور درباروں کی تزئین و آرائش،بحالی پرزور دیناوقت کا اہم تقاضا ہے: سید سعید الحسن شاہ 

املاک کی بہتر دیکھ بھال،حاصل آمدن کو تبلیغ دینئ،مزارات کی تزئین و آرائش کو اسلامی اصولوں کے مطا بق ڈھالا جا ئے گا، صوبائی وز یر اوقاف

مذہبی سیاحت کو فروغ دینا، تاریخی مساجد و عمارات اور درباروں کی تزئین و آرائش،بحالی پرزور دیناوقت کا اہم تقاضا ہے: سید سعید الحسن شاہ 

لاہور:  صوبائی وز یر اوقاف سید سعید الحسن شاہ نے کہا ہے کہ مذہبی تعمیراتی و مذہبی سیاحت کو فروغ، تاریخی مساجد و عمارات اور درباروں کی تزئین و آرائش اور بحالی و قت کا اہم تقاضا ہے ۔ انہوں نے کہا کہ یکم جنوری 1960ءکو محکمہ اوقاف کا قیام عمل میں لا یا گیا تھا، جس کا مقصداملاک کی بہتر دیکھ بھال،حاصل آمدن کو تبلیغ دینئ،مزارات کی تزئین و آرائش کو اسلامی اصولوں کے مطا بق ڈھالا جا سکے ۔ جس کے مقاصد اور مساجد ہماری مقامی آبادی اور معاشرت کا نیو کلیس اور ایک مو ثردینی اور معاشرتی ادارے کے طور پر معروف اور معتبر ہے۔

مسلمانوں کو ان درگاہوں پر جانے سے چوبیس گھنٹے روحانی تسکین پر گامزن ہونے کا حوصلہ ملتا رہتا ہے۔ اسی لئے اسلامی تعمیراتی ورثہ میں عملی و جما لیاتی پہلو و¾ ں کا وجود ایک دوسرے پر لا زم و ملزوم ہو گئے ہیں۔تعمیرات کا فن صرف فن ہی نہیں بلکہ اس کی جڑیںاسلامی تعمیرات اندر سے پروان چڑہتی ہیں۔تعمیرات کی دنیا میں اسلامی فن تعمیرات کا الگ اور منفرد تشخص موجود ہے۔ انہوں نے کہا کہ مسلمان بادشاہوں کے دور کی مزہبی و دیگر شاہی تعمیرات مقامی ورثہ کا قابل فخر حصہ ہیں۔

مسلمان بادشاہو ں کر دور کی اسلامی طرذ تعمیرات پر دنیاآج بھی حیران ہے۔اس دور کی تعمیرات میں تزئین آرائش،خطاطی،نقاشی،گل کاری اور جیو میٹری پر خاص تو جہ دی گئی ہے۔ مسلمانوں کو اپنے عہد عروج میں علم حساب اور جیو میٹری پر عبور رہا ہے۔آج بھی مغربی تدریسی اداروں میں ان کی کتابیںان مضامین میں رہنمائی کے اصول سکھاتی ہیں۔ وزیر اعظم پاکستان اور وزیر اعلیٰ پنجاب کی رہنمائی میں صوبہ بھر کی تمام تاریخی مساجد،درگاہوںاورعمارات کو اصل حالت میں لانے کے سلسلہ میںاقدامات کا آغاز کر دیا گیا ہے۔