سردار محمد سبطین خان نے گندم خریداری مرکز پپلاں میں فیتہ کاٹ کرخریداری کا باقاعدہ افتتاح کیا

ہ وزیر اعلیٰ پنجاب سردارعثمان بزدار صوبہ میں زرعی ترقی کے لئے انقلا بی اقدامات برؤئے کارلا رہے ہیں ، وزیر جنگلات پنجاب

 سردار محمد سبطین خان نے گندم خریداری مرکز پپلاں میں فیتہ کاٹ کرخریداری کا باقاعدہ افتتاح کیا

لاہور :ضلع میانوالی میں گندم خریداری کا باقاعدہ آغاز وزیر جنگلات پنجاب سردار محمد سبطین خان نے گندم خریداری مرکز پپلاں میں فیتہ کاٹ کرخریداری کا باقاعدہ افتتاح کیا۔اس موقع پر تحصیل انتظامیہ اور محکمہ خوراک کے افسران، چیئر مین وائس چیئر مین مارکیٹ کمیٹی پپلاں کے علاوہ مقامی کاشتکاروں کی بڑی تعدادمو جود تھی۔افتتاح کے بعد وزیرجنگلات پنجاب سردار محمد سبطین خان نے گفتگو کر تے ہو ئے کہا کہ وزیر اعلیٰ پنجاب سردارعثمان بزدار صوبہ میں زرعی ترقی کے لئے انقلا بی اقدامات برؤئے کارلا رہے ہیں۔

انہوں نے کہا کہ حکو مت پنجاب نے گندم کی قیمت خرید میں 250روپے فی بوری اضافہ کیا ہے اور باردانہ کی فراہمی میں گرداوری کی شرط ختم کر کے کا شتکاروں کی سہولت کیلئے پہلے آئیے پہلے آئیے کی بنیاد پر باردانہ فراہم کیا جارہا ہے۔صوبائی وزیر نے کہا کہ انشاء اللہ حکو مت کا شتکاروں سے گندم کی پیداوار کا دانہ دانہ خرید کرے گی۔انہوں نے محکمہ خوراک کے افسران کو کاشتکاروں سے خرید کردہ گندم کی بروقت اور فوری ادائیگیوں اور تما م خریداری مراکز پر سہولت کی فراہمی یقینی بنا نے کی ہدایت کی۔وزیر جنگلات پنجاب نے کاشتکاروں سے کہا کہ وہ کروناوائرس کی وباء کی موجودہ صورتحال میں اس سے بچا ؤ کی حفاظتی، احتیاطی تدابیر، سماجی فاصلہ اور دیگر ہدایات کی سختی سے پا بندی کریں تا کہ وہ اِس موذی مرض سے محفوظ رہ سکیں۔

سردار محمدسبطین خان نے سنٹر پر کئے گئے انتظامات کا بھی تفصیلی معائنہ کیا اور کرونا وائرس ایس او پیز کے مطابق کئے گئے انتظامات کو سراہا۔اس موقع پر سنٹر انچارج نے بریفنگ دیتے ہوئے بتا یا کہ حکو مت پنجاب نے اس سال ضلع میانوالی کیلئے گندم خریداری کاہدف727830بوری مقرر کیا ہے۔پپلاں خریداری مرکز کیلئے175000بوری گندم خرید کر نے کاٹارگٹ دیا گیا ہے۔انہوں نے بتایا کہ انشاء اللہ ضلعی، تحصیل انتظامیہ کی رہنمائی اور کاشتکاروں کے تعاون سے گندم خریداری کا ہدف آسانی سے مکمل کر لیں گے۔وزیر جنگلات پنجاب نے اوزان کے پیما نے اور گوداموں کا بھی معائنہ کیا۔انہوں نے ہدایت کی کہ کا شتکاروں کا کسی سطح پراستحصال نہیں ہو نا چاہیے اور ان کیلئے زیا دہ سے زیادہ آسانیاں فراہم کی جا ئیں۔