چیف سیکرٹری کا درآمد شدہ چینی کی ترسیل،فروخت سے متعلق جامع پلان تیار کرنے کا حکم

 سبزیوں کی قیمتوں کو موثر انداز میں کنٹرول کرنے کیلئے زرعی منڈیوں کے نظام کو جدید خطوط پر استوار کرنا ہوگا، اجلاس سے خطاب

چیف سیکرٹری کا درآمد شدہ چینی کی ترسیل،فروخت سے متعلق جامع پلان تیار کرنے کا حکم

لاہور: چیف سیکرٹری پنجاب نے ہدایت کی ہے کہ درآمد شدہ چینی کی ترسیل اورفروخت سے متعلق جامع پلان تیار کیا جائے اور اس سلسلے میں ڈپٹی کمشنرز اپنے اضلاع کی ڈیمانڈ سے متعلق محکمہ صنعت کوجلد از جلدآگاہ کریں۔ انہوں نے یہ ہدایت پرائس کنٹرول اقدامات کا جائزہ لینے کیلئے منعقد اجلاس کی صدارت کرتے ہوئے کی۔اجلاس میں سہولت بازاروں اور مارکیٹ میں اشیاء ضروریہ بالخصوص آٹے اور چینی کے نرخوں اور دستیابی کا تفصیلی جائزہ لیا گیا۔ اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے چیف سیکرٹری نے کہا کہ وزیر اعظم اور وزیر اعلیٰ پنجاب کی ہدایت کے مطابق صوبے بھر میں آٹا اور چینی سمیت کسی شے کی قلت نہیں ہونے دی جائے گی۔

انہوں نے کہا کہ صارفین کو ریلیف کی فراہمی کیلئے چینی درآمد کی جارہی ہے، اسکی کھیپ پہنچتے ہی مارکیٹ میں بلا تاخیر سپلائی شروع کر دی جائے گی۔ انہوں نے افسران کو ہدایت کی کہ درآمد شدہ چینی صرف اور صرف گھریلو صارفین تک پہنچنی چاہئے اوریقینی بنایا جائے کہ کسی صورت اسکی ذخیرہ اندوزی یا کمرشل استعمال کیلئے فروخت نہ ہو۔ چیف سیکرٹری نے کہا کہ اشیا ء ضروریہ کی مقررہ نرخوں پر وافر مقدار میں دستیابی حکومت کی ترجیح ہے، ڈپٹی کمشنر زاگر آٹا اور چینی سمیت کسی بھی شے کی قلت محسوس کریں تو فوری طور پر محکمہ خوراک کو آگاہ کریں۔انہوں نے ڈویژنل کمشنرز سے اضلاع میں اشیاء بالخصوص منڈیوں میں سبزیوں کی قیمتوں کو کنٹرول کرنے کیلئے کئے جانیوالے اقدامات بارے دریافت کیا۔

انہوں نے کہا کہ زرعی اجناس بالخصوص سبزیوں کی قیمتوں کو موثر انداز میں کنٹرول کرنے کیلئے زرعی منڈیوں کے نظام کو جدید خطوط پر استوار کرنا ہوگا اور آڑھتیوں اور کمیشن ایجنٹس کی اجارہ داری ختم کرنی ہوگی۔ انہوں نے ہدایت کی کہ پنجاب ایگریکلچر ریگولیٹری اتھارٹی (پامرا) ایکٹ کے قواعد منظور ہوتے ہی اضلاع میں نجی منڈیوں کے قیام پر کام شروع کر دیا جائے۔ چیف سیکرٹری نے کہا کہ صوبے میں سہولت بازاروں  کے قیام کا مقصد عام آدمی کو ریلیف کی فراہمی ہے جس کے مثبت نتائج برآمد ہونا شروع ہو گئے ہیں۔

انہوں نے کہا کہ نئے ماہ کے آغاز پر سہولت بازاروں میں خریداروں کا رش بڑھنے کی توقع ہے اس لئے تمام اشیاء بالخصوص آٹا اور چینی کی سپلائی کو بڑھایا جائے۔  سیکرٹری صنعت نے اجلاس کو بریفنگ میں بتایا کہ گزشتہ روز سہولت بازاروں سے استفادہ کرنے والے صارفین کی تعداد تقریبا دو لاکھ 72ہزار تھی۔ خوراک اور صنعت کے محکموں کے ایڈمنسٹریٹو سیکرٹریز، سی ای او اربن یونٹ، سپیشل سیکرٹری ایگریکلچر مارکیٹنگ نے اجلاس میں شرکت کی جبکہ ڈویژنل کمشنرز، آر پی اوز، ڈپٹی کمشنرز اور ڈی پی اوز ویڈیو لنک کے ذریعے شریک ہوئے۔