صوبائی محکمہ انسانی حقوق و اقلیتی امور اور حقوق پاکستان کے اشتراک سے دو روزہ ٹریننگ ورکشاپ

ٹریننگ ورکشاپ میں پنجاب بھر کے 25سے زائد سرکاری اداروں کے نمائندگان کی شرکت

صوبائی محکمہ انسانی حقوق و اقلیتی امور اور حقوق پاکستان کے اشتراک سے دو روزہ ٹریننگ ورکشاپ

لاہور: صوبائی محکمہ انسانی حقوق واقلیتی امور اور حقوق پاکستان کے باہمی اشتراک سے لاہور کے ایک نجی ہوٹل میں پاکستان کے بین الاقوامی انسانی حقوق کی رپورٹنگ میں فرائض کے موضوع پر دو روزہ ٹریننگ ورکشاپ کا انعقاد کیا گیا۔ورکشاپ میں مختلف محکموں کے 25 سے زائد سرکاری عہدیداران نے شرکت کی۔ سیکرٹری انسانی حقوق ندیم الرحمن نے خطاب کرتے ہوئے کہاکہ اس ورکشاپ کا مقصد پاکستان کے انسانی حقوق کے عالمی وعدوں کی رپورٹنگ اور ان پر عمل درآمد کے سلسلے میں محکمہ انسانی حقوق اور دوسرے متعلقہ محکموں کے عہدیداران کی تکنیکی اور آپریشنل صلاحیتوں میں مزید نکھار لاناہے۔

سینئر ٹریننگ اینڈ کیپسٹی ڈیویلپمنٹ ایکسپرٹ، حقوق پاکستان علی دیوان حسن نے تربیتی ورکشاپ کے اغراض و مقاصد پر روشنی ڈالتے ہوئے بتایا کہ ورکشاپ کا انعقاد انسانی حقوق سے منسلک تمام اسٹیک ہولڈرز کی باہمی مشاورت سے کیا گیا ہے جبکہ یورپی یونین کیجانب سے پاکستان بھر میں اپنی نوعیت کا یہ پہلا منفرد پراجیکٹ ہے، جس سے پاکستان میں موجود عہدیداران کی کیپسٹی بلڈنگ کی جا سکے گی اور پاکستان کے یورپی یونین کے ساتھ تعلقات میں مزید بہتری لائی جا سکے گی۔

ٹریننگ ورکشاپ کے اختتامی سیشن میں صوبائی وزیر انسانی حقوق اعجاز عالم آگسٹین نے شرکت کی اور شرکاء سے کہاکہ انسانی حقوق کا احترام اور قانون کی حکمرانی حکومت کا اہم ایجنڈا ہے جبکہ ٹریٹی سیل،ہومن رائٹس پنجاب پہلے ہی آگاہی قوانین،پالیسی میں نئی جہتوں کے تعارف اور بہتری کے لئے زبردست خدمات سر انجام دے رہا ہے۔یہ ادارہ پنجاب حکومت کو وفاقی حکومت اور یورپی یونین و اقوام عالم کے ساتھ پیشہ وارانہ رپورٹنگ کے ذریعے جوڑنے کا باعث بھی بن رہا ہے جبکہ اسے یورپی یونین کی جانب سے بے حد سراہا گیا ہے۔ورکشاپ کے اختتام پر صوبائی وزیر نے شرکاء میں تعریفی اسناد تقسیم کیں۔ ریجنل ڈائریکٹر برائے جنوبی ایشیا ایمنسٹی انٹرنیشنل عمیر وڑائچ اور ڈپٹی سیکرٹری انسانی حقوق محمد یوسف کے علاوہ مختلف محکموں کے نمائندگان نے تربیتی ورکشاپ میں شرکت کی۔