سمارٹ لاک ڈاؤن ختم ہونے کے بعد ڈپٹی کمشنرزعلاقوں کو سیل یا کھولنے کافیصلہ کر سکیں گے: چیف سیکرٹری

 سینئر صوبائی وزیر عبدالعلیم خان کی زیر صدارت اجلاس میں پلازمہ بیچنے والوں کیخلاف سخت کارروائی کا فیصلہ  کراچی سٹاک ایکسچینج پر حملے کے بعدصوبہ میں سیکیورٹی ہائی الرٹ ہے، حساس مقامات پر اضافی نفری تعینات کی جا رہی ہے: آئی جی

سمارٹ لاک ڈاؤن ختم ہونے کے بعد ڈپٹی کمشنرزعلاقوں کو سیل یا کھولنے کافیصلہ کر سکیں گے: چیف سیکرٹری

 لاہور: سمارٹ لاک ڈاؤن ختم ہونے کے بعد نئی حکمت عملی، ضروری ادویات کی قیمتوں،ان کی سپلائی اور کراچی میں دہشتگردی کے بعد صوبہ میں سیکیورٹی انتظامات کا جائزہ لینے کیلئے سینئر صوبائی وزیر عبدالعلیم خان کی زیر صدارت ایک اہم اجلاس چیف سیکرٹری آفس میں منعقد ہوا۔ چیف سیکرٹری پنجاب جواد رفیق ملک،کمشنر لاہور ڈویژن سیف انجم، سی سی پی او لاہو ذوالفقار حمید اور متعلقہ افسران نے اجلاس میں شرکت کی جبکہ آئی جی پنجاب، ڈویژنل کمشنرز، آرپی اوز، ڈپٹی کمشنرز اور ڈی پی اوز ویڈیو لنک کے ذریعے شریک ہوئے۔ اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے چیف سیکرٹری پنجاب نے کہا کہ سمارٹ لاک ڈاؤن ختم ہونے کے بعد ڈپٹی کمشنرزاپنے اضلاع میں کورونا وائرس کے کیسز کی تعداد کو مد نظر رکھتے ہوئے متاثرہ علاقوں کو سیل کرنے یا کھولنے کا فیصلہ کر سکیں گے۔

انہوں نے ہدایت کی کہ انتظامی افسران اضلاع میں کوویڈ19کے علاج میں استعمال ہونے والی ادویات کی دستیابی یقینی بنانے کیلئے کم از کم چار فارمیسیز نوٹیفائی کریں،  مریضوں کی تعداد زیادہ ہونے کی صورت میں چار سے زائد فارمیسیز بھی نوٹیفائی کی جا سکتی ہیں۔ اجلاس میں فیصلہ کیا گیا کہ نوٹیفائی کی جانے والی یہ فارمیسیز 24گھنٹے کام کریں گی اور عوام کی آگاہی کیلئے ان کی تشہیر میڈیا میں کی جائے گی۔  سیکرٹری صحت نے اجلاس کو بریفنگ میں بتایا کہ صوبے میں ضروری ادویات کی کوئی کمی نہیں۔ اجلاس میں پلازمہ بیچنے والوں کیخلاف سخت کارروائی کا فیصلہ بھی کیا گیا۔

امن و امان کی صورتحال پر بریفنگ دیتے ہوئے آئی جی پنجاب شعیب دستگیر نے بتایا کہ کراچی سٹاک ایکسچینج پر حملے کے بعدصوبہ میں سیکیورٹی ہائی الرٹ ہے اورتمام حساس مقامات پر پولیس کی اضافی نفری تعینات کی جا رہی ہے۔ چیف سیکرٹری پنجاب نے فیلڈ افسران کو  شہروں سے باہر مویشی منڈیاں لگانے کیلئے جگہوں کی نشاندہی کر کے رپورٹ بھجوانے سے متعلق ہدایات بھی جاری کیں۔